امام احمد بن حنبل اور عراق کا گاوں

امام احمد فرماتے ہیں ایک دفعہ مجھے عراق کے کسی گاوں میں رات ہو گئی۔ میں ایک مسجد میں گیا لیکن چوکیدار نے مجھے وہآں سے نکال دیا میں مسجد سے باہر فرش پر سو گیا۔ چوکیدار نے مجھے پاوّں سے پکڑا اور گھسیٹ کر مسجد سے دور کر دیا۔ ایک خدا ترس آدمی مجھے اپنے گھر لے گیا وہ شخص چلتے پھرتے اٹھتے بیٹھتے ہر وقت استغفار پڑھتا تھا صبح ہوئی تو میں نے اس شخص سے پوچھا کیا آپ کو استغفار پڑھنے کا کوئی فائدہ ہوا اس نے جواب دیا میری ہر دعا قبول ہوئی سوائے اس کے کہ میری امام احمد بن حنبل سے ملاقات ہو جائے میں نے کہا میں ہی احمد بن حنبل ہوں اور تم دیکھو کیسے گھسیٹ کر مجھے تمہارے پاس لایا گیا ہے۔