مشت زنی کی تباہ کاریاں

ہاتھ سے سرچشمہ حیات منی کے خارج کرنے کو مشت زنی کہتے ہیں یہ بری عادت جب کسی کو پڑ جاتی ہے تو اسے اس سے جان چھڑانا مشکل ہو جاتا ہے۔اکثر لوگ اس عادت کو نقصان دہ اور باعث گناہ تو سمجھتے ہیں لیکن شیطانی وسوسوں سے یہ خیال کرتے ہیں کہ آج تو اس کام کو کر لوں ،آئندہ کبھی نہیں کروں گا ان کو یہ معلوم ہو جانا چاہئے کہ اگر وہ یہی سوچتے رہے تو کبھی بھی اس کام کو نہ چھوڑ سکیں گے اور یہ آج کبھی ختم نہیں ہو
گا۔یہ آج اس وقت ختم ہو گا جب جسم سے تمام طاقتیں ختم ہو کر رہ جائیں گی پھر کف افسوس ملتا رہ جائے گا اس گناہ کے متعلق رسول اللہ ﷺ کے ارشادات اور اس سے پید اہونیو الی خرابیاں آگے بیان کی جا رہی ہیں تاکہ چند منٹ کی لذت حاصل کرنے والوں کو یہ معلوم ہو جائے کہ وہ جس کام کو باعث لذت سمجھ رہے ہیں وہ دراصل لذت نہیں بلکہ دنیا ور آخرت میں تکلیف اور پریشانی کا سبب ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے