لباس کا ذکر

لباس کے بارے میں علما فرماتے ہیں کہ مومن کا لباس واجب، مستحب، حرام، مکروہ اور مباح ہوتا ہے

واجب وہ ہے جس سے ستر کیا جاسکے
مستحب وہ ہے جس کے پہننے میں شریعت میں ترغیب آئی ہو
مکروہ وہ ہے جس کے نہ پہننے کی ترغیب آئی ہو
حرام وہ ہے جس کے پہننے کی ممانعت آئی ہو

1۔ حضرت ام سلمہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں کہ حضور اقدس ﷺ سب کپڑوں میں کرتے کو زیادہ پسند فرماتے تھے

2۔ اسما رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں کہ حضور ﷺ کے کرتہ کی آستین پہونچے تک ہوتی تھی

3۔ حضرت انس رضی اللہ عنہہ فرماتے ہیں کہ حضور اقدس ﷺ حضرت اسامہ رضی اللہ عنہہ پر سہارا لگائے ہوئے مکان سے تشریف لائے اس وقت حضور اقدس ﷺ پر ایک یمنی منقش کپڑا تھا جس میں حضور اقدس ﷺ لپٹے ہوئے تھے پس حضور ﷺ نے باہر تشریف لا کر صحابہ کو نماز پڑھائی

4۔ سمرۃ بن جندب رضی اللہ عنہہ فرماتے ہیں کہ حضور اقدس ﷺ نے ارشاد فرمایا کہ سفید کپڑے پہنا کرو اس لئے کہ وہ زیادہ پاک صاف رہتا ہے اور اسی میں اپنے مردوں کو کفنایا کرہ

5۔ حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں کہ حضور اقدس ﷺ نے ایک رومی جبہ زیب تن فرما رکھا تھا جس کی آستینیں تنگ تھی

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے