خود کشی ایک سنگین جرم

حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہہ سے روایت ہے کہ

حضور اکرم ﷺ نے ارشاد فرمایا جس نے پہاڑ سے اپنے آپ کو گرا کر خودکشی کرلی وہ جہنم کی آگ میں ہو گا اور اس میں ہمیشہ پڑا رہے گا۔ اور جس نے زہر پی کر خود کشی کی تو وہ زہر اس کے ہاتھ میں ہو گا اور جہنم کی آگ میں ہمیشہ پیتا رہے گا اور جس نے لوہے کے ہتھیار سے خود کشی کی تو اس کا ہتھیار اس کے ہاتھ میں ہو گا اور جہنم کی آگ میں ہمیشہ کے لیے اپنے پیٹ میں مارتا رہے گا

فائدہ: انسان کو اللّٰه تعالٰی نے یہ زندگی ایک امانت کے طور پر دی ہے۔ جسم اور روح دونوں بطور امانت ہیں۔اس کی حفاظت کی ذمہ داری بھی انسان پر اسکا حق ہے۔
اللّٰه تعالٰی قرآن میں فرماتے ہیں،
لا یکلف اللّٰه الا وسعھا،
اللّٰه تعالٰی کسی کی طاقت سے زیادہ اس پر تکلیف نہیں ڈالتے،
انسان کو اللّٰه تعالٰی نے دنیا میں آزمائش اور امتحان کیلئے بھیجا ہے، تاکہ خوشی کی حالت میں بھی اور پریشانی کی حالت میں بھی انسان کا امتحان لیا جائے کہ کیا انسان اپنے آپ کو بندہ سمجھ کر میری طرف دیکھتا ہے یا خود کو بڑا سمجھ کر اکیلے اپنے اوپر بھروسہ کرتا ہے۔
خودکشی کی طرف شیطان انسان کو تب لے جاتا ہے جب انسان کا اللّٰه تعالٰی پر ایمان اور یقین کمزور ہو جائے اور انسان مایوسی کے اندھیروں میں پھنس جائے، جب انسان کو اللّٰه تعالٰی پر مضبوط اعتماد ہو اور وہ تقدیر کے فیصلوں پر راضی ہوجائے تو انسان ہمت اور استقامت سے زندگی کے مصائب کا مقابلہ کرتا ہے اور کسی قسم کی بزدلی ، کم ہمتی ، بےدلی اور کمزوری کا اظہار نہیں کرتا ، ہار نہیں مانتا۔
اور جب اس پر سخت مشکلات اور آزمائشیں آجائیں تو وہ اللّٰه تعالٰی کے سامنے اپنی عاجزی اور کمزوری کا اظہار کرکے اللّٰه تعالٰی پر توکل،اعتماد اور یقین کرکے پریشانیوں کے سامنے سینہ سپر ہوجاتا ہے اور جوانمردی سے ان کا مقابلہ کرتاہے، تو ایسے ہی شخص کے ساتھ اللّٰه تعالٰی کی مدد ہوتی ہے۔
یہی شخص امتحان میں کامیابی حاصل کر لیتا ہے اور کچھ عرصہ بعد اس سے تکالیف ہٹا دی جاتی ہیں۔
ہماری پریشانیوں کو حل ہار ماننے میں نہیں ہے ،زندگی ہار ماننے کا نام نہیں، اسی وجہ سے نبی کریم صلی اللّٰه علیہ وسلم نے اس پر انتہائی سخت وعید بیان فرمائی ہے۔
جس چیز سے کسی انسان نے خود کو قتل کیا اور جس طریقے سے قتل کیا ، اس کو اسی عذاب میں مبتلا کیا جائے گا کہ جہنم کی آگ میں اسی ذریعے سے اسی طریقے سے خود کو بار بار مارنے پر مجبور کیا جائے گا۔
اللّٰه تعالٰی ہم سب کو ایسی بدترین موت سے بچائے۔