تمام اعمال کا دارومدار نیتوں پر ہے

یہ بات ہر انسان کو معلوم ہونی چاہیے کہ تمام مباح اعمال جیسے نیند کھانا پینا اور طلب رزق وغیرہ ہیں ان کو عبادات میں تبدیل کیا جا سکتا ہے اور ان کے ذریعے ہزاروں نیکیاں کمائی جا سکتی ہیں بشرطیکہ اس کی نیت اللہ کا تقرب حاصل کرنا ہو۔

رسول اکرم ﷺ کا ارشاد ہے

تمام اعمال کا دارومدار نیتوں پر ہے اور آدمی کے لیے وہی ہے جس کی اس نے نیت کی ہے بخاری مسلم

اور اس کی ایک سادہ سی مثال یوں ہے کہ سوتے وقت اگر کوئی انسان یہ نیت کرکے جلدی سوجائے کہ نماز تہجد اور نماز فجر کے لیے جلدی بیدارہونا ہے تو یہ نیند اس کی عبادت بن جائے گی اسی طرح باقی مباحات ہیں