بدکاری عقلمندی کا نشان

عَن اَبِی ھُرَیرَۃَ رَضِیَ اللہُ عَنہہُ قَالَ: قَالَ رَسُولُ اللہِ ﷺ سَیَاتِی عَلَی النًَاسِ زَمَان یُخَیًَرُ الرًَجُلُ بَینَ العَجزِ وَالفُجُورِ فَمَن اَدرَکَ ذَالِکَ الزًَمَانَ فَلیَختَرِ العَجزَ عَلَی الفُجُورِ

مستدرک حاکم کنز العمال ج: 14 ص:218

ترجمہ: لوگوں پر ایک زمانہ آئے گا جس میں آدمی کو مجبور کیا جائے گا کہ یا تو احمق [ملا] کہلائے یا بد کاری کو اختیار کرے پس جو شخص یہ زمانہ پائے اسے چاہیَے کہ بد کاری اختیار کرنے کی بجائے نکو کہلانے کو پسند کرے