ایک عبرتناک واقعہ

حضرت عبد الرحمنؓ بن حارث کا بیان ہے کہ میں نے حضرت عثمانؓ بن عفان کو فرماتے سنا شراب سے بچو یہ تمام بری باتوں کی جڑ ہے پچھلے زمانے میں

ایک عابد تھا ایک بد چلن عورت اس پر عاشق ہو گئی جس نے عابد کو بلانے کے لئے اپنی باندی کو بھیجا باندی نے آ کر عابد سے کہا ہم گواہی کے لئے آپ کو بلانے آئے ہیں عابد باندی کے ساتھ چل دیا۔باندی ایک محل نما عمارت میں داخل ہوئی اور ایک دروازہ کے بعد دوسرے دروازہ میں اور اس کے بعد تیسرے دروازہ میں داخل ہوتی چلی گئی جس دروازے سے آگے بڑھتی اس کو بندکرتی چلی جاتی تھی۔ آخر کار ایک گورے رنگ کی خوبصورت عورت کے سامنے پہنچ گئے اس کے پاس ایک بچہ تھا اور شراب رکھی ہوئی تھی ۔عابد سے کہنے لگی میں نے تو گواہی کے لئے نہیں بلوایا بلکہ تم کو تین کاموں میں سے ایک کام کرنا ہوگا۔یا تو مجھ سے برائی کر یا شراب پیو یا بچہ کو قتل کرو ۔عابد نے کہا جب کوئی صورت نجات کی نہیں تو مجھے شراب پلا دے ۔عورت نے ایک جام پلایا عابد نے جام پی کر کہا اب ذرا ٹھہرو۔ جب کچھ دیر میں نشہ چڑھا تو اس نے عورت سے زنا بھی کیا اور بچہ کو قتل کردیا لہذاتم شراب سے پرہیز رکھو۔بخد ا ایمان اور شراب خوری کی عادت ایک جگہ جمع نہیں ہو سکتی ایک کے آنے سے دوسرے کا نکل جانا ضروری ہے۔ (رواہ نسائی)

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے