انسانی جسم پر شراب کے اثرات

ازہائے جین فزیالوجی علم الصحت ۔ مصنف ڈاکٹر سید محمد اجمل B.Sc, B.T.M.B.H ڈاکٹر محمد فاروق قریشی B.A.D, P.H.E
منہ میں پہنچتے ہی الکوحل (شراب)سے لعاب دہن (تھوک ) تیزی سے جاری ہونے لگتا ہے۔اس کے علاوہ معدے کے استر کی جھلی اس کی وجہ سے سرخ ہو جاتی ہے۔اور اگر الکوحل کھانے کے ساتھ تھوڑی سی مقدار میں استعمال کی جائے تو معدے میں غذا جلد ہضم ہو جاتی ہے۔جسم میں پہنچ کر فوراً جذب ہو جاتی ہے۔دل کی حرکت تیز ہو جاتی ہے اور جلدکے نیچے خون کی نالیاں اس کے استعمال سے پھیل جاتی ہیں۔جس کی وجہ سے غلط طور پر محسوس ہوتا ہے کہ جسم میں زیادہ حرارت پید اہو گئی ہے۔لیکن حقیقت میں یہ حرار ت عزیزی کو کم کر دیتی ہے۔کیونکہ خون کی شریانیں پھیلنے سے جسم کی حرارت زیادہ خارج ہوتی ہے الکوحل کی تھوڑی سی مقدار میں اس کا استعمال جسم میں قوت مدافعت کو ختم کر دیتا ہے او ر ایسا شخص آئے دن نزلہ زکام اور طرح طرح کی
بیماریوں کا شکار ہو تا رہتا ہے اس کے علاوہ شراب کی ایک خاصیت یہ بھی ہے۔کہ اس کو استعمال کرنے والا بہت جلداس کا عادی ہو جاتا ہے اور استعمال کے ساتھ ساتھ اس کی مقدار بھی بڑھتی جاتی ہے اس کی وجہ سے اس کے مضر اثرات سخت ہوتے جاتے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے