سجدہ تلاوت کی اغلاط

۱۔ بعض لوگ کہتے ہیں کہ سجدہ تلاوت کرکے دونوں طرف سلام پھیرے، یہ بھی محض غلط ہے۔

۲۔ بعض عورتیں سمجھتی ہیں کہ تلاوت کے دو سجدے ہونے چاہئیں، یعنی ایک آیت پڑھے تو دو سجدے واجب ہو جاتے ہیں، سو یہ محض غلط ہے ( مطلب یہ ہے کہ ایک آیت تلاوت کرنے سے ایک ہی سجدہ واجب ہوتا ہے جو نماز کی تمام شرائط کی رعایت رکھ کر بلا تکبیرِتحریمہ اور بغیر سلام ادا کیا جاتا ہے، کذافی کتب الفقہ

۳۔ بعض لوگ یہ سمجھتے ہیں کہ حالتِ حیض میں بھی اگر حائضہ سجدہ تلاوت کسی سے سُن لے یا کوئی عورت حالتِ نفاس میں کسی سے آیتِ سجدہ سُن لے تو ان پر سجدہ تلاوت واجب ہو جاتا ہے، اس لئے پاک ہونے کے بعد اس کو سجدہ کرنا ہو گا، یہ غلط ہے، ان پر سجدہ واجب نہیں ہوتا۔