جوٹھے پانی کے احکام

جو حکم جاندار کا ہے وہی حکم اس کے پسینے لعاب اور جوٹھے کا ہے

۱۔ انسان اور گھوڑے کا پسینہ، لعاب اور جوٹھا پاک ہے
۲۔ بلی کا جوٹھآ پاک ہے لیکن اس سے طہارت حاصل کرنا مکروہ تنریہی ہے
۳۔ چوہا سانپ اور چھپکلی وغیرہ کا جوٹھا مکروہ ہے
۴۔ گدھے اور خچر کا جوٹھا مشکوک ہے یعنی پاک تو ہے لیکن اس بات میں شک ہے کہ نہ معلوم اس سے طہارت حاصل ہوتی ہے یا نہیں