والدین کے ساتھ برتاو

والدین کے ساتھ برتاو کے آداب

حضرت ابوبکر سے روایت ہے فرماتے ہیں کہ میں نے بنی کریمﷺ کو یہ فرماتے ہوئے سنا کہ اللہ تعالی جس گناہ کے بارے میں چاہتے ہیں اس کی سزا قیامت تک موخر فرماتے ہیں ماسوا والدین کی نافرمانی کے اس کی سزا دنیا میں انسان کو مل جاتی ہے

آداب:
۱۔ ماں باپ کی دل و جان سے اطاعت کرنا اگرچہ زیادتی بھی کرتے ہوں اور ان کے عظیم احسانات کو پیش نظر رکھ کر ان کے وہ مطالبے بھی خوشی خوشی سے پورے کرنا جو آپ کے ذوق اور مزاج پر گراں ہوں بشرطیکہ وہ دین کے خلاف نہ ہوں
۲۔ جو کام شرعا واجب ہوں اور والدین اس سے منع کریں تو اس میں ان کی اطاعت جائز نہیں ہے مثلا فرض علم کے لیے یا فرض حج کے لیے والدین نہ جانے دیں تو ان کی اطاعت جائز نہیں البتہ اگر والدین کی خدمت کے لیے کوئی نہ ہو تو حج موخر کرنے کی گنجائش ہے
۳۔ جو کام شرعا جائز ہوں اور ماں باپ اس کے کرنے کا حکم دیں تو اس میں بھی ان کی اطاعت جائز نہیں مثلا ناجائز ملازمت اختیار کرنے کا حکم دیں
۴۔ اگر والدین بلاوجہ ہیوی کو طلاق دینے کا مطالبہ کریں تو ان کی اطاعت ناجائز اور گناہ ہے اور اگر اس سے والدین کو تکلیف ہے اور والدین جق بجانب ہیں تو ہیوی کو طلاق دینا واجب ہے
۵۔ والدین کے ساتھ عاجزی اور انکساری سے پیش آنا
۶۔ ماں باپ کے رشتہ داروں کے ساتھ برابر نیکی کا سلوک کرتے رہنا
۷۔ ان کو نام لے کر نہ پکارنا
۸۔ ماں باپ پر دل کھول کر خرچ کرنا
۹۔ ان سے پہلے نہ بیٹھنا ان کے پیچھے پیچھے چلنا
۱۰۔ ماں باپ کے لیے برابر دعا کرنا
۱۱۔ والدین کو برا بھلا نہ کہنا ان کی شان میں گستاخی نہ کرنا
۱۲۔ کسی کے والدین کو گالی نہ دینا کیونکہ یہ اپنے والدین کو گالی دینے کے مترادف ہے اور گناہ کبیرہ ہے
۱۳۔ اگر کوئی والدین کے مرنے کے بعد ان کے ساتھ اچھا سلوک کرنا چاہتاہو تو ان کے حق میں استغفار کرے ان کے دوستوں کا اکرام کرے اور ان کے رشتہ داروں کے ساتھ صلہ رحمی کرے جن کے ساتھ رشتہ داری صرف انہی کی وجہ سے ہو
۱۴۔ کبھی کبھی والدین کی قبروں کی زیارت کے لیے جانا اور بہتر ہے کہ جمعہ کے دن جائے کہ اس سے اللہ تعالی گناہ معاف فرماتے ہیں اور وہ بیٹا فرمانبردار لکھا جاتا ہے
۱۵۔ بڑے بھائی چحچا کے ساتھ باپ کی طرح اور چھوٹے بھائی کے ساتھ اولاد کی طرح سلوک کرنا ایسے ہی بڑی بہن کا والدہ کی طرح اور چھوٹی بہن پر اولاد کی طرح شفقت کرنا
۱۶۔ اگر کسی وجہ سے والدین ناراض ہو جائیں تو ان سے معافی مانگ کر ان کو راضی کرنے کی کوشش کرنا