زیر ناف بال کاٹنے کے متعلق آداب

۱۔ زیر ناف بال اور بغلوں کی صفائی مسنون ہے کیونکہ حدیث شریف میں اس کا حکم دیا گیا ہے اور اسی میں خوبصورتی اور جمال ہے ہر ہفتہ صفائی کا اہتمام کیا جائے یا چالیس دنوں سے زیادہ انہیں نہ چھوڑا جائے
۲۔ مسلم خواتین سے سر اور ابرو کے بالوں کا بڑھانا مطلوب ہے بلا کسی ضرورت انہیں منڈوانا حرام ہے انہیں مونڈنا جائز نہیں کیونکہ سنن نسائی میں حضرت علی سے روایت ہے کہ رسول ﷺ نے عورت کو اپنے سر کے بال منذانے سے منع فرمایا ہے سر کے بالوں کو زیب و زینت کے علاوہ کسی اور مقصد کے لیے چھوٹا کرنا مثلا ان کی حفاظت سے عورت عاجز ہو جائے یا اتنے ہو جائیں کہ عورت کے لیے تکلیف دہ ثابت ہوں تو بقدر ضرورت ان کو چھوٹا کروانے میں کوئی حرج نہیں۔ اگر بالوں کو چھوٹا کرانے میں کافروں اور فاسقہ فاجرہ عورتوں یا مردوں سے مشابہت مقصود ہو تو حرام ہے۔ اس لیے رسول ﷺ نے کافروں کی مشابہت سے اور عورتوں کو مردوں کی مشابہت سے منع فرمایا ہے