حج کی قسمیں

۱۔ اول یہ کہ صرف حج کی نیت کرے اور اسی کا احرام باندھے عمرہ کو حج کے ساتھ جمع نہ کرے اس قسم کے حج کا نام افراد ہے ایسا حج کرنے والے کو مفرد کہتے ہیں

۲۔ دوسری صورت یہ یے کع حج کے ساتھ عمرہ بھی کرے اوراحرام بھی دونوں کا ایک ساتھ باندھے اس کا نام قران ہے اور ایسا حج کرنے والے کو قارن کہتے ہیں

۳۔ تیسری صورت یہ ہے کہ حج کے ساتھ عمرہ کو اس طرح کرے کہ میقات سے صرف عمرہ کا احرام باندھے اس احرام میں حج کو شریک نہ کرے پھر مکہ مکرمہ پہنچ کر شوال یا ذوالقعدہ یا ذوالحجہ کی کسی تاریخ میں حج سے پہلے افعال عمرہ سے فارغ ہو کر بال منڈوانے کے بعد احرام ختم کردے پھر آٹھویں ذوالحجہ کو مکہ مکرمہ سے حج کا احرام باندھے اس کا نام تمتع ہے اور ایسا حج کرنے والے کو متمتع کہتے ہیں
حج کرنے والے کو اختیار ہے کہ ان تینوں قسموں میں سے جو چاہے اختیار کرے مگر قران اضل ہے پھر تمتع اور پھر افراد